80

۔Carpenter Ant اعزاز احمد

سکول کے دنوں میں جب میں میٹرک میں تھا تب میں خود ہی سکول کے ہاسٹل کا وارڈن تھا. ایک رات ہم نے اپنے سکول کے کچن کے دیوار کی کچھ تختیاں نکالی اور ایک دوست کو اندر چینی جیبوں میں بھرنے اتار دیا. کچن میں اندھیرا تھا. اس نے جیبیں بھر لی اور باہر نکل آیا. باہر روشنی میں آتے ہی اسکی چیخ نکلی اور اس نے قمیض اتار کر دور پھینک دی. ہم دوڑ کر اس کے پاس گئے. اس نے کہا کہ چینی کو ہر طرف نے بڑی چیونٹیوں نے گھیر لیا ہے. میں نے جا کر اسکی قمیض اٹھائی تو دیکھا کہ اس نے چینی کی بجائے چائے کی پتیاں جیب میں بھری تھی.

اس چیونٹی کو مختلف مقامی ناموں سے پکارا جاتا ہے. ہم پشتو میں اس کو “سیک میگے” بولتے ہیں. اس کا ساینسی نام Camponotus compressus ہے اور تعلق کیڑوں کے Formicidae خاندان سے ہے. یہ دنیا کے بیشتر ممالک میں پائے جاتے ہیں . پوری دنیا میں اس چیونٹی کے تقریباً ایک ہزار انواع پائے جاتے ہیں.

رہائش –

یہ گھر کے علاوہ مختلف جگہوں میں رہتے ہیں جس میں نمدار اور لکڑی والی جگہیں سر فہرست ہیں. یہ گیلی لکڑی میں سوراخ کر کے گھونسلے بناتے ہیں اور بسا اوقات نمدار یا خشک زمین میں گھونسلا بناتے ہیں.
یہ کالونی کی شکل میں رہتے ہیں جس میں بچوں کی دیکھ بھال، خوراک لانے والے اور گھونسلے کی حفاظت والے چیونٹیاں ہوتی ہیں.

خوراک –

یہ چیونٹیاں لکڑی نہیں کھاتے. لکڑی کو بطور رہائش گاہ استعمال کرتے ہیں. یہ والی نوع میٹھی چیزوں کی شوقین ہوتی ہے. یہ دوسرے جانداروں کا شکار نہیں کرتے. کبھی کبھار دوسرے مردہ کیڑوں کو رات کے وقت اندر سے خالی کرتے ہیں اور انکے جسم کا بیرونی حصہ چھوڑ دیتے ہیں.
یہ چیونٹیاں مختلف قسم کے کیڑے پالتی ہے جس میں زیادہ تر سست تیلے اور گدھیڑی شامل ہے. یہ اپنی اینٹینا سے انکے جسم پر ضرب لگاتے ہیں جس سے وہ اپنے جسم سے ایک قسم کا رطوبت نکالتے ہیں جسکو honey dew یعنی شہد کا قطرہ کہا جاتا ہے، اور یہ چیونٹی اس قطرے کو پیتے ہیں. بدلے میں چیونٹیاں ان کیڑوں کو بارش اور دوسرے شکاریوں سے تحفظ فراہم کرتے ہیں.
یہ اپنی خوراک میں یوریا بھی لیتے ہیں اس وجہ سے لیٹرین یا دوسرے پیشاب زدہ جگہوں میں موجود ہوتے ہیں.

افزائش نسل-

ساون کے مہینے میں انکے پر نکل آتے ہیں جس سے یہ نئے ٹھکانے کی تلاش میں اڑ جاتے ہیں. اس اڑان کے دوران نر اور مادہ چیونٹی کا ملاپ ہوتا ہے. اس اڑان کو nuptial flight کہا جاتا ہے. یہ اڑان دیمک میں بھی ہوتا ہے. اس کے بعد نر چیونٹیاں مر جاتے ہیں اور مادہ چیونٹیاں پر گرا کر نیا گھونسلا بناتے ہیں.

بچاؤ-

اگر آپ ان چیونٹیوں سے تنگ ہیں تو کسی بھی زرعی سٹور سے بورک ایسڈ خریدیں اور چینی کو پانی میں حل کر کے مکس کریں. چینی دس حصے اور بورک ایسڈ ایک حصے کی مقدار میں.
اس کے علاوہ اور بھی مختلف کیمیکل زرعی دکانوں میں دستیاب ہوتی ہیں.

کیڑوں کے بارے میں جاننے کے لیے جواین کریں “کیڑوں کی دنیا Keero ki dunya” گروپ.

تحریر – اعزاز احمد
المعروف The insect whisperer

اس مضمون پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں