27

اناٹومی_آف_نیوران

#اناٹومی_آف_نیوران

|Anatomy of Neuron|

حسن جیلانی

ہمارے جسم میں موجود نیورانز خُلیات کو سگنلز مُنتقل کرنے اور چلانے کے لیے بہت ہی اعلی سطح پہ تیار کئے گئے ہیں ۔ایک نیوران نروس سسٹم کے مُختلف حصوں میں کئ قسم کی افعال سرانجام دیتے ہیں ۔ شکل ، سائز اور الیکٹروکیمیکل خصوصیات کے بنا پر نیوران بہت سے کئ اقسام میں مُنقسیم ہیں ۔ اناٹومیکل سٹرکچر کے حساب سے نیوران کو چار بڑے حصوں میں تقسیم کیا جاتا ہے ۔

1. سوما soma نیوران کے جسم کو سوما کہا جاتا ہے یہ نیوکلئس پہ مُشتمل ہوتا ہے ایک نیوران سیل میں زیادہ تر پروٹین اسی حصے میں ترکیب پاتے ہیں ۔ نیوکلئیس کا ڈایامیٹر تقریباً 3 سے لیکر 18 مائکرو میٹر تک ہوسکتا ہیں ۔

2. ڈینڈریٹس dendrites . ایک نیوران کا ڈینریٹس کو اس نیوران کی خلیاتی لمبائ بھی کہتے ہیں جو کئ شاخوں پہ مُشتمل ہوتی ہیں ۔ اس مُکمل ساخت اور شکل کو ہم کو استعاراتی طور پر ڈینریٹیک ٹری dendritic tree بھی کہتے ہیں ۔ یہ وہ جگہ ہیں جہاں پہ زیادہ تر نیوران ڈینڈریٹک سپائن کے زریعے درآمد کرتے رہتے ہیں ۔

3. ایگزون axon. ایگزون کیبل نُما ساخت کا حامل ہوتا ہیں جو لمبائ میں سوما سے تقریباً دس یا سو گناہ زیادہ پھیلاو پہ مُحیط ہوتا ہیں ۔ ایگزون سوما سے ایلکٹرک سگنلز لیتا ہیں ۔ اور بعض قسم کے معلومات اس کو فراہم بھی کرتا ہیں ۔ زیادہ تر نیورانز میں سے صرف ایک ایگرون ہوتا ہے لیکن یہ نیوران کئ شاخوں پہ مُشتمل ہو سکتے ہیں جس کا کام دوسرے خُلیات کو ٹارگٹک کر کے پیغامات پہنچانا ہیں ۔ ایگزون کا وہ حصہ جو اس کو سوما کے باڈی سے اٹیچ کرتا ہے ۔ اس حصے کو “axon hillock” کہا جاتا ہیں ۔ اناٹومیکل سٹرکچر کے علاوہ یہ حصہ بہت زیادہ کثافت کے حامل ہوتا ہیں جو وولٹیج سے بھرپور سوڈیم چینلز پہ مُشتمل ہوتی ہیں ۔ یہ حصہ ایک نیوران کا سب سے زیادہ پُرجوش اور اُتارچڑھاو سے باخبر حصہ ہیں ۔ ایگزون اور ایگزون ہیلاک معلومات کے روانی اور رساوں میں بھی شامل ہوتے ہیں یہ حصہ دوسرے نیوران سے درآمداد بھی وصول کرتا ہے ۔

4. ایگزون ٹرمِنل axon terminal . یہ ایک نیوران کا آخری حصہ ہوتا ہیں ۔ جو سوما یعنی نیوران باڈی سے دور واقع ہیں ۔ یہ حصہ سائناپسِس synapses پہ مُشتمل ہوتا ہے جو دو نیوران کو آپس میں مُتلعق کرنے اور جوڑنے کی وجہ بنتی ہے ۔ یہاں پہ ایک سائناپٹک بٹن لگا ہوا ہوتا ہے۔ سایناپٹک بٹن ایک خاص ساخت کی حامل ہوتی ہیں جہاں پہ عصبی انتقالی کیمیکلز neurotransmitter chemicals دوسرے ٹارگٹ نیورانز کے ساتھ جوڑنے کے لیے خارج کر دیتی ہیں ۔ اس کے علاوہ ایگزون کے باڈی پہ ایک اور بٹن بھی نصب ہوتی ہیں جس کو “en passant” بٹن کہا جاتا ہیں ۔

ایگزون اور ڈینڈریٹِس “سنٹرل نروس سسٹم ” میں موٹے ہوتے ہیں ۔ لیکن پیریفرل نروس سسٹم میں یہ زیادہ موٹے ہوتے ہیں ۔ سوما عام طور پر تقریباً 10 سے 25 مائکرومیٹر تک کا احاطہ کرتی ہیں اور عموما جس سیل نیوکلس پہ مُشتمل ہوتی ہیں اس سے کم ہوتا ہیں ۔ انسان کے موٹر نیوران کا سب سے لمبا ایگزون تقریباً ایک میٹر تک لمبا ہوتا ہیں ۔ جو پاوں کے پنجے سے لیکر ریڑھ کی ہڈی تک پھیلا ہوتا ہے ۔ سینسری نیوران میں موجود ایگزون پنجوں سے لیکر ریڑھ کی ہڈی کے پچھلے کالم تک پھیلی ہوی ہے ۔ بالغ افراد میں اس کی لمبائ 1.5 میٹر تک ہوتی ہیں ۔ زرافے جیسے جانور میں یہ لمبائ کئ میٹرز پہ مُشتمل ہوتی ہیں جو اس کے مُکمل گردن تک پھیلی ہوی ہوتی ہیں ۔ تمام سیلز کی طرح ہر نیوران کی سیل باڈی بھی “پلازما ممبرین” کے اندر مخفوظ ہوتی ہیں .

https://www.facebook.com/ilmkijustju/

https://www.facebook.com/groups/AutoPrince/

http://justju.pk

اس مضمون پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں